chai ke Shaukeen Hoshiyar

جن گھروں میں چائے کو کوئی جانتا بھی نہیں تھا وہاں یہ ضروریات زندگی میں شامل ہو چکی ہے۔ لیکن اس سے صحت پر جو اثرات ہوتے ہیں ان پر بہت کم توجہ دی جاتی ہے۔ مختلف مزاجو پر چائے کے اثرات مختلف ہوتے ہیں۔ اس سے گرمی میں اضافہ ہوتا ہے البتہ سرد اور بلغمی مزاج والوں کے لیے اس کا اعتدال سے پینا کسی حد تک فائدہ مند ہے۔ دماغ اور اعصاب میں تحرک پیدا کرتی ہے۔ دماغ کا دوران خون تیز ہوجاتا ہے جس سے بدن میں سستی محسوس ہونے لگتی ہے۔ اگر خشکی کے باعث بار بار پیاس لگتی ہو تو چائے کا استعمال سود مند ہے۔ چائے کا زیادہ استعمال طرح طرح کے امراض کا باعث بنتا ہے۔ معدہ سست ہو جاتا ہے بھوک نہیں لگتی جو کچھ کھایا جاتا ہے وہ اچھی طرح ہضم نہیں ہوتا۔ چائے مزاج کے اعتبار سے گرم خشک اور پسینہ آور ہیں۔ خون کو خراب کرتی ہے اور نیند کو کم کرکے بے خوابی کی شکایت پیدا کرتی ہے۔ محرک اثرات کی وجہ سے چائے مردانہ قوت میں کمزوری۔ منی کو خراب۔ جریان۔ احتلام اور سرعت انزال کی شکایت بھی پیدا کرتی ہے۔ دماغ کی نازک رگیں کمزور ہو جاتی ہیں اور چہرے کا رنگ زرد ہو جاتا ہے۔ اور یہ صحت کے لئے نقصان دہ ہے

Leave a Comment

Your email address will not be published.

Please disable your adblocker or whitelist this site!

%d bloggers like this: